xs 133

نوازشریف کے قابل ضمانت وارنٹ گرفتاری جاری

سلام آباد: احتساب عدالت نے توشہ خانہ ریفرنس میں سابق وزیراعظم نوازشریف کے قابل ضمانت وارنٹ گرفتاری جاری کر دیئے ،سابق صدر آصف علی زرداری کی آج حاضری سے استثنیٰ کی درخواست منظور ہوئی۔
تفصیلات کے مطابق سابق صدر آصف زرداری اور 2 سابق وزرائے اعظم کے خلاف احتساب عدالت کے جج سید اصغر علی نے توشہ خانہ ریفرنس کی سماعت کی، سابق وزیرِ اعظم یوسف رضا گیلانی عدالت میں پیش ہوئے۔سابق صدر آصف زرداری اور سابق وزیرِ اعظم نواز شریف عدالت میں پیش نہ ہوئے۔دورانِ سماعت نیب نے عدالت میں یوسف رضا گیلانی اور عبدالغنی مجید کو گرفتار کرنے کی استدعا کر دی۔نیب پراسیکیوٹر سردار مظفر عباسی کی جانب سے آصف علی زرداری اور نواز شریف کے بھی وارنٹِ گرفتاری جاری کرنے کی استدعا کی گئی۔نیب پراسیکیوٹر نے عدالت کو بتایا کہ نواز شریف اور آصف علی زرداری کو سمن ان کی رہائش گاہوں پر وصول کروائے، انور مجید اسپتال میں زیرِ علاج ہیں، وہاں سمن وصول نہیں کیے گئے۔سماعت کے دوران عدالت میں آصف علی زرداری کی جانب سے حاضری سے استثنیٰ کی درخواست دی گئی جس میں ان کے وکیل نے موقف اختیار کیا کہ آصف زرداری علیل ہیں اس لیے انہیں حاضری سے استثنیٰ دیا جائے۔احتساب عدالت کے جج سید اصغر علی نے کہا کہ آصف علی زرداری کو صرف آج کی حاضری سے استثنیٰ دے رہا ہوں، آئندہ سماعت پر انہیں ہر صورت عدالت میں پیش ہونا ہے۔عدالت نے استفسار کیا کہ میاں نواز شریف کی طرف سے کون پیش ہوا ہے؟نیب پراسیکیوٹر سردار مظفر عباسی نے عدالت کو بتایا کہ میاں نواز شریف کی طرف سے کوئی بھی پیش نہیں ہوا، احتساب عدالت نے سمن کی تعمیل کے باوجود عدم حاضری پر نواز شریف کے قابلِ ضمانت وارنٹِ گرفتاری جاری کیے، جبکہ نواز شریف اور آصف علی زرداری سمیت تمام ملزمان کو 11 جون کو عدالت میں پیش ہونے کا حکم دے دیا ۔واضح رہے کہ جعلی بینک اکاؤنٹس کیس کے توشہ خانہ ریفرنس میں اسلام آباد کی احتساب عدالت نے سابق صدر آصف علی زرداری، سابق وزرائے اعظم نواز شریف اور یوسف رضا گیلانی کو آج طلب کررکھا تھا ، آصف زرداری اور نواز شریف پر یوسف رضا گیلانی کے ذریعے توشہ خانہ سے گاڑیاں لینے کا الزام ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں