siraj-ul-haq 91

پاکستانی قوم امریکہ کو اپنی حدود کے استعمال کی اجازت نہیں دیگی’ سرا ج الحق

امیر جماعت اسلامی سراج الحق نے کہاہے کہ پاکستانی قوم امریکہ کو فضائی اور زمینی حدود کے استعمال کی اجازت نہیں دے گی ۔ پرویزمشرف کے دور کی غلطی دوبارہ دہرائی گئی تو یہ ملک اور قوم کے لیے ایک اور المیہ ہوگا ۔ پاکستان پرائی جنگ اپنے کندھوں پر لادنے کی بھاری قیمت پہلے ہی ادا کرچکاہے ۔ڈالروں کے عوض امریکہ کی جنگ میں 70 ہزارافراد ایندھن بنے ۔حکومت نے پرویز مشرف کی پالیسی اپنا کر اپنے تبدیلی کے نعرے کو خود دفن کردیا ۔قرضوں کے خاتمے کا وعدہ کیا لیکن اس میں اضافے کے تمام ریکارڈ توڑ دیے ۔ پی ٹی آئی نے ملک کا جو حال تین سال میں کردیاہے ، اس کو ٹھیک کرنے کے لیے کئی نسلوں کو قیمت چکانا پڑے گی ۔ ان خیالات کااظہار انہوںنے جماعت اسلامی وسطی پنجاب کے نظم کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ اجلاس میں امیر جماعت اسلامی وسطی پنجاب جاوید قصوری ، بلال قدرت بٹ ، قیصر شریف ، ذکر اللہ مجاہد ، وقار ندیم وڑائچ ، نصر اللہ گورائیہ اور دیگر شریک تھے ۔سراج الحق نے کہاکہ حکومت کو امریکہ کے اس بیان کی فوری وضاحت کرنی چاہئیں جس میں دعویٰ کیا گیاہے کہ پاکستان میں امریکی فوج کو فضائی اور زمینی حدود کو استعمال کرنے کی دوبارہ اجازت د ی گئی ہے ۔ خطے کی موجودہ صورتحال میں ایسا کوئی بھی قدم پاکستان کو دوبارہ پرائی جنگ میں دھکیلنے کے مترادف ہوگا ۔ گزشتہ دو عشروں میں پاکستان اپنی ایسی ہی غلطی کا بھاری نقصان اٹھا چکاہے ۔ ضرورت اس امر کی ہے کہ حکومت ہوش کے ناخن لے اور ماضی کی غلطی کو دہرانے سے باز رہے ۔انہوں نے کہاکہ اگر اس طرح کا کوئی قدم اٹھایا گیاتو قوم ماضی کی طرح اب اس پالیسی کو دہرانے نہیں دے گی ۔ ہمارے ملک کے لیے ضروری ہے کہ خطے میں امن ہو اور کسی بھی ایسی سرگرمی کا حصہ نہ بنا جائے جس سے مجموعی طور پر پاکستان کی سلامتی اور امن دائو پر لگ جائے۔سراج الحق نے کہاکہ سٹیٹ بینک کی قرضوں میں اضافے کے حوالے سے رپورٹ نے حکومتی دعوئوں کی قلعی کھول دی ہے ۔ کشکول توڑنے کا دعوے کرنے والوں نے پوری دنیا میں پاکستان کے امیج کو قرضے لینے کی وجہ سے متاثر کیاہے ۔ سراج الحق نے مطالبہ کیا کہ آئی ایم ایف اور ورلڈ بنک سے ہونے والے معاہدوں کو قوم کے سامنے لایا جائے کہ یہ قرضے کن شرائط پر حاصل کیے جا رہے ہیں ۔ جماعت اسلامی کشمیر اور فلسطین کی آزادی کے لیے اپنی اخلاقی حمایت جاری رکھے گی ۔ 30 مئی بروز اتوار پشاور کے اندر ایک بڑا مارچ کر کے پوری دنیا کو یہ پیغام دے گی کہ پاکستانی قوم کے دل فلسطینیوں کے ساتھ دھڑکتے ہیں ۔ فلسطینیوں نے کھلی دہشتگردی کا مقابلہ پختہ عزم ، ایمان اور بے لوث قربانیوں سے کیاہے ۔وقت کا تقاضا ہے کہ تمام مسلم ممالک آگے بڑھ کر غزہ کی تعمیر نو کے لیے اپنا بھر پور کردار ادا کریں ۔ فوری طور پر فلسطین فنڈ کا قیام عمل میں لایا جائے جس میں تمام مسلم ممالک ، عالمی برادری اور رفاہی تنظیمیںبھر پور حصہ لیں۔ انہوں نے اہالیان کراچی کا خصوصی شکریہ ادا کیا جنہوں نے لاکھوں کی تعداد میں نکل کر فلسطینیوں کے حق میں آواز بلند کی اور اسرائیل کے اقدامات کی مذمت کرتے ہوئے فلسطین پر اسرائیل کے ناجائز قبضے کے خاتمے کا مطالبہ کیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں