670

بریکوٹ میں ٹریفک پولیس اور محکمہ ٹی ایم اے کی سر پرستی میں غیر قانونی اڈے قائیم ،بریکوٹ بازارمیں ٹریفک جام میں پہلے نمبر پر اگیا

بریکوٹ میں ٹریفک پولیس اور محکمہ ٹی ایم اے کی سر پرستی میں قائم رکشہ ،سوزکی ،فلائینگ کوچ ،لوڈر سمیت غیر قانونی اڈے قائیم ، بریکوٹ بازارمیں ٹریفک جام میں پہلے نمبر پر اگیا ، مزے کی بات یہ ہے کہ ان نوجوان ڈرائیوروں کے پاس لائسنس بھی موجود نہیں ہوتا، اناڑی ڈرائیوروں کی وجہ سے ٹریفک حادثات روز کا معمول بن گئے ہیں۔ٹریفک وارڈنز کا معلومات ہونے کے باوجود تمام صورت حال سے آنکھیں بند کرلی ہیں۔تفصیلات کے مطابق ٹریفک پولیس کی نااہلی اور ٹی ایم اے کی عدم دلچسپی کی وجہ سے بریکوٹ کا لمبا چوڑا کشادہ بازار جس میں ہر وقت ٹریفک ر رواں دواں رہتا تھا مگر نامناسب انتظامی امور اور غیرقانونی طریقوں کی وجہ سے سڑک کے دونوں اطراف گاڑیاں کھڑی ہوتی ہیں جوٹریفک جام کی سب سے بڑی وجہ ہے۔ زرائع کے مطابق متعلقہ حکام نے اس حوالے سے آنکھیں بند کی ہوئی ہیں جس کی وجہ انکو ماہانہ وصولی ہے ،بریکوٹ پیر بابا چوک ،مینگورہ سٹینڈ ،مینہ بازار،ہسپتال روڈ،بونیر روڈ،بینکس کے سامنے،بٹ خیلہ روڈ،ایم سی بی بینک روڈاور مذید دیگر جگہ شامل ہیں وہاں پر رکشوں کے غیر قانونی اڈے اور لوڈر سوزکی کی قطاریں ٹریفک جام کا سبب بن گئے ہیں جبکہ ٹریفک انتظامیہ کو معلوم ہونے کے باوجود انکھوں پر پٹے لگی ہوئی ہے۔ا س حوالے سے یہ بھی دیکھنے میں آیا ہے کہ ان رکشوں کے ڈرائیورز نے مختلف مقامات پر جانے کا کوئی کرایہ طے نہیں کیا ہوتا ہے اور اس ہی وجہ سے ڈرائیور ز کی مسافروں سے تکرار اور لڑائی جھگڑا بھی اکثر ہوتے رہتے ہیں ،رکشاچلانے والے اکثر ڈرائیوروں کے پاس ڈرائیونگ لائسنس بھی موجود نہیں ہے اور یہ اناڑی ڈرائیور بلا خوف و خطر پورے تحصیل بریکوٹ میں سڑکوں پر خطرناک انداز میں اپنے رکشوں کو دوڑا تے ہیں بریکوٹ کے عوام نے ٹریفک کے اعلی افسران ڈی سی سوات سے اپیل کی ہے کہ ان غیر قانونی اڈوں کے خاتمے اور ان کے سرپرستوں کے خلاف سخت ایکشن لے کر اس مسئلے کو حل کروائیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں