844

تحصیل انتظامیہ اور متعلقہ حکام کی غفلت اور بے حسی کے باعث شہر میں بھکاریوں اور خوبروبھکارنوں کی یلغار

تحصیل انتظامیہ اور متعلقہ حکام کی غفلت اور بے حسی کے باعث شہر میں بھکاریوں اور خوبروبھکارنوں کی یلغار،بازاروں چوکوں چوراہوں پر پیشہ ور بھکاریوں کا قبضہ،شریف شہریوں کے ناک میں دم چلنا پھرنا محال ہوگیا ۔چوری کی وارداتوں میںبے تحاشہ اضافہ۔ اس تشویش ناک اضافے نے پولیس اور قانون نافذ کرنے والے اداروں کی کارکردگی پر بہت سے سوال پیدا کر دیئے ہیں۔
سب ڈویژن بریکوٹ بھر میں پیشہ ور خوبرو بھکاریوں اور بھکارنوں میں اضافہ ہوگیا ہے پیشہ ور بھکاری جن میں ہر عمر کے افراد خواتین بچے مرد او ر بوڑھے شامل ہیں بھیک مانگتے نظر آتے ہیں جن میں اکثریت ایسے بھکاریوں کی ہے جو خود ساختہ معذور بنے ہوتے ہیں،ان میں خوبرو بھکاری لڑکیاں نوجوان لڑکوں کو دعوت گناہ بھی دیتی ہیں جبکہ کچھ ایسے بھی ہوتے ہیں جو پورے پورے خاندان کے ہمراہ بھیک مانگتے نظر آتے ہیں یہ بھکاری سڑک کنارے گزرنے والے افراد خصوصاً خواتین کے پیچھے پڑ جاتے ہیں اور اس حد تک مجبور کر دیتے ہیں کہ وہ بھیک دے کر ہی اپنی جان بچاتے ہیں اور تو اور اب ان لوگوں نے گھروں میں جانا شروع کر دیا ہے جس کی وجہ سے خواتین میں خوف و ہراس پھیل گیا ہے ۔اس ساری صورتحال میں ضلعی انتظامیہ اور تحصیل انتظامیہ تماشائی کا کردار ادا کر رہی ہے اور ان کی جانب سے کوئی کاروائی نہیں کی جا رہی بھکاریوں کی تعداد میں اضافہ کی وجہ سے تاجر اور عام شہری عاجز آگئے ہیںبھکاری بھیک نہ ملنے پر پیچھے پڑ جاتے ہیں زرائع کے مطابق بھکاریوں نے باقاعدہ گینگ بنا رکھے ہیںجو چوریوں ،منشیات فروشی اور مختلف جرائم میں بھی ملوث پائے گئے ہیں ، بریکوٹ کے عوامی سماجی حلقوں اورتاجر وںنے انتظامیہ سے مطالبہ کیا ہے کہ شہر میں بھکاریوں پر قابو پانے کے لئے سخت اقدامات کئے جائیںاور ان بھکاریوں کے داخلے پر پابندی لگاکر ضلع بدر کیا جائے ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں