998

تحصیل بریکوٹ میں سودی کاروبار عروج پر ہر طرف سود کا بازار گرم

بریکوٹ ( ظاہر شاہ کمال )تحصیل بریکوٹ میں سودی کاروبار عروج پر ہر طرف سود کا بازار گرم ، سود خور اللہ تعالی سے کھلی جنگ لڑ رہے ہیں انتظامیہ کے برائے نام احکامات سرد خانے کے نظرعوام گناہ کی دلدل میں ائے روز پھنس رہے ہیں۔ تحصیل بھر میں سودی کاروبارزور و شور سے جاری ہے۔ بااثر افراد معمولی رقوم بڑے بڑے سودی شرح پر دیکر ضرورت مند اور مجبوروں کے جمع پونجی سمیٹنے لگے ہیں اور خدائی نظام اور قانون کے مد مقابل ریاست اور قانون کو چیلنج کرنے لگے ہیںگاڑیاں ،پلاٹس اور نقد رقوم اسان طریقے سے سود پر مہیا کرتے ہیں ،حکومت نے سود خوروں کے خلاف ڈیٹا اکھٹا کر دیا تھا مگر نا معلوم وجوہات کے بنا پر نافذاعمل نہ ہو سکا اور بے کار ہو کر سرد خانے کے نظر ہو گیا ۔بارگین سے لیکر مال مویشوں کے کاروبار تک اور پلاٹ سے لیکر نقد رقوم تک سود پر دستیاب ہیں اور کھلے عام حکومت کو چیلنج کر رہے ہیں
بریکوٹ میں سر عام بڑے بڑے غیر رجسٹرڈبارگین موجود ہیں جو سودی کاروبار سر اٹھا کر کر رہے ہیں ،مقامی پولیس کو ماہانہ کے بنیاد پر حصہ ملنے کا بھی انکشاف ہوا ہے ، پراپرٹی ڈیلرز سمیت دیگر کاروبار ی مراکز بھی سودی نظام پر اللہ تعالی کے باغی بن گئیں ہیں۔بریکوٹ بھر میں سودی تجارت عام ہو نے کی وجہ سے علاقہ کے خوانین بھی اس میں اپنا حصہ ڈال کر منافع کما رہے ہیں ۔مقامی ایم پی ایز اور وزراءسمیت پولیس اور انتظامیہ کی معنی خیز خاموشی سے سودی کاروبار وسعت اختیار کر رہا ہے ، مذہبی جماعتیں بھی صرف اخباری بیانات جاری کرکے ، فوٹو سیشن تک محدود ہے ، علاقے کے عوام نے ضلعی انتظامیہ سمیت صوبائی حکومت سے سودی کاروبار کے خاتمے کے لئے ہنگامی اور سنجیدہ اقدامات اٹھانے کی اپیل کی ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں