1,076

طب نبوی کے فروغ اور حکیموں کے مسائل کے حل کے لئے حکومت ہرممکن اقدامات اٹھائے گی.چیئرمین ڈیڈک ایم پی اے فضل حکیم

پاکستان طبی کانفرنس سوات نے یونانی ادویات کو ایلوپیتھک سسٹم کے تحت لانے کے فیصلے کو مسترد کرتے ہوئے طب کے لئے ہربل لیبارٹریاں قائم کرنے کا مطالبہ کردیا ،پاکستان میں 45ہزار رجسٹر ڈحکیم بے ضر ر اور سستے علا ج کے ساتھ اپنی خدمات انجام دے رہے ہیں حکومت کروڑوں عوام کو اس سستے علاج سے محروم نہ کرے ،حکومت انڈیا اور چین کی طرح پاکستان سے بھی ہربل ادویات کی برآمد ات کے لئے اقدامات کریں ،جعلی حکیموں اور ادویات کے خلاف پاکستان طبی کانفرنس بھرپور تعاون کریگی ،چیئرمین ڈیڈک ایم پی اے فضل حکیم نے طبی کونسل کے مسائل حل کرنے اور اسمبلی فلور پر آوازاٹھانے کی یقین دہانی کرائی ،ان خیالات کا اظہار ممبر ان نیشنل کونسل فارطب اسلام آباد حکیم سرتاجی نبی اور حکیم محمود یونس فہیم ،خیبر طبیہ کالج پشاور کے چیف ایگزیکٹیو حکیم صوفی بشیر ،پاکستان طبی کانفرنس سوات کے صدر حکیم محمد ہمایون باچا ،جنرل سیکرٹری حکیم جوادعلی اور دیگرمقررین نے پاکستان طبی کانفرنس سوات کے زیر اہتمام اطبا ءکے سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے کیا ،کانفرنس سے چیئرمین ڈیڈک ایم پی اے فضل حکیم نے بھی خطاب کیا اور کہاکہ طب نبوی کے فروغ اور حکیموں کے مسائل کے حل کے لئے حکومت ہرممکن اقدامات اٹھائے گی ،پاکستان طبی کانفرنس کے رہنماﺅں نے کہاکہ ہربل اور ایلوپیتھک جداگانہ طرز علاج ہے لیکن سابق پی پی پی دور حکومت میں ہربل کو ایلوپتھک کے حوالے کرنے کا فیصلہ کیا گیاہے جو قطعی طور پر نامناسب فیصلہ ہے ،انہوں نے کہاکہ آج چین سالانہ 70ارب ڈالر جبکہ انڈیا ایک ارب ڈالر کی ہربل ادویات برآمد کررہا ہے لیکن پاکستان میں ادویات کی برآمدات پر پابندی عائد ہے ،انہوں نے کہاکہ ریگولیٹری اتھارٹی کے خلاف نہیں لیکن اس کی آڑ میں طب نبوی کے خلاف کسی قسم کے اقدام کو براشت نہیں کریں گے ،انہوں نے مطالبہ کیا حکومت جعلی ادویات اور جعلی حکیموں کے خلاف کارروائی عمل میں لانے کے ساتھ ساتھ ہر بل ادویات کے لئے جداگانہ لیبارٹریاں قائم کریں تاکہ طب نبوی کی اہمیت برقراررہ سکے ،چیئرمین ڈیڈیک فضل حکیم خان نے کہاکہ حکومت حکیموں کے مسائل کے لئے ہر ممکن اقدامات اٹھائے گی کیونکہ ہم کسی سے روزگار چھیننے کے حق میں نہیں بلکہ روزگار دینے کے لئے کوشاں ہیں انہوں نے کہاکہ اس ضمن میں وہ وزیر اعلیٰ پرویز خٹک اور صوبائی وزیر صحت شہرام ترکئی سے ملاقات کرکے اس مسئلے کا حل نکالنے کی کوشش کریں گے ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں