1,292

عمران خان کینسر ہسپتال کے بجائے نفسیاتی ہسپتال تعمیر کرکے اپنا اور اپنے کارکنوں کا علاج کروائیں…خان نواب

عمران خان کینسر ہسپتال کے بجائے نفسیاتی ہسپتال تعمیر کرکے اپنا اور اپنے کارکنوں کا علاج کروائیں ، وزیر اعظم بننے کے لئے دھرنوں پہ دھرنے جبکہ سی پیک جیسے اہم منصوبے میں خیبر پختونخوا کو نظر انداز کرنے پر کوئی دھرنا نہیں دیا گیا،تبدیلی کے دعویداروں نے پورا دور حکومت ناچ گانوں اور انتشار کی سیاست میں گزارا،عوام سے روزگار کے ذرائع چھین کر دو وقت روٹی سے محروم کیا جارہا ہے،تعلیمی ایمرجنسی والوں نے تاحال کوئی سکول نہیں بنایا ،حقداروں کے بجائے سرکاری نوکریوں پر دیگر علاقوں کے من پسند افراد کی بھرتیاں کرپشن کا منہ بولتا ثبوت ہے،عوامی پیسہ سے فنڈز مختص کرنے کے باوجود لوگ چندہ اکٹھا کرکے ٹرانسفارمر مرمت کررہے ہیں ،اے این پی پختون قوم کی ترجمان پارٹی ہے جنہوں نے امن کے نام پر ووٹ لینے کے بعد سینکروں قربانیاں دے پر پائیدار امن قائم کیا اور ریکارڈ ترقیاتی منصوبوں کے بدولت ترقی کا سفر شروع کیا،لیکن بد قسمتی سے گذشتہ الیکشن میں عوام کو دھوکہ دیا گیا جسکا خمیازہ پوری قوم بھگت رہے ہیں،عوام بیدار ہوچکے ہیں آئندہ الیکشن میں نوجوانوں کے ووٹ کی طاقت سے نام نہاد سیاستدانوں کو شکست دیکر بیرونی ممالک بھاگنے پر مجبور کرینگے،ملک و قوم کے خاطر خون کا آخری قطرہ بہانے کو ہر وقت تیار ہیں ان خیالات کا اظہارANPکے مرکزی جائنٹ سکریٹری خان نواب ،سابق ایم پی اے وقار خان،داود خان ،شوکت خان،بلال خان،شیر احمد،سید ثناء اللہ شاہ،نجیب اللہ خان،ابراہیم شاہ،حسن اور دیگر نے توتانوبانڈئی میں اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کیا اس موقع پر یونین کونسل توتانوبانڈئی کے سطح پر نیشنل یوتھ ارگنائزیشن کی باقاعدہ طور پر تنظیم نو کی گئی جہاں پر بلال خان صدر،سلطان بہادر سینئر نائب صدر،حسن شاہ نائب صدر ،امجد علی جنرل سکریٹری،اعجاز ذادہ ایڈیشنل جنرل سکریٹری،احمد شاہ ڈپٹی جنرل سکریٹری ،وقار یونس جائنٹ سکریٹری ،شفیع اللہ انفارمیشن سکریٹری،ایاز ز فنانس سکریٹری،حسین شاہ کلچر اینڈ ایجوکیشن سکریٹری منتخب ہوئے اجتماع سے خطاب کے دوران مقررین نے نو منتخب عہدیداران کو مبارکباد دیتے ہوئے امید ظاہر کی کہ منتخب ممبران اپنی تمام تر توانائیاں بروئے کار لاتے ہوئے باچاخان کے پیغام کو ہر کان تک پہنچائیں گے انہوں نے کہا کہ پی ٹی آئی نے تبدیلی کے نام پر ووٹ لیکر عوام کو بے وقوف بنانے کی ہر ممکن کوشش کی کیونکہ تبدیلی کے دعویداروں نے دھرنوں اور انتشار کی سیاست کے سیوا کچھ نہیں کیا اسی وجہ سے مسائل کے انبار جمع ہوچکے ہیں اور لوگ دو وقت کی روٹی سے محروم ہورہے ہیں جبکہ اداروں کو چھیڑ کر پورا نظام چوپٹ کردیا ہے،انہوں نے کہا کہ عمران خان اور اسکے کارندے شارٹ کٹ طریقہ سے وزیر اعظم بننے کا خواب دیکھ دیکھ کر نفسیاتی مریض بن چکے ہیں جس کے لئے لاتعداد ناکام دھرنے دئے گئے البتہ خیبر پختونخوا کے عوام کے ساتھ ہونے والے زیادتیوں کے خلاف اور حقوق کے حصول کے لئے کوئی دھرنا نہیں دیا گیا جس سے صاف واضح ہے کہ عمران خان پختون قوم کو اپنے مقاصد کے لئے استعمال کررہا ہے انہوں نے مزید کہا کہ پختون قوم خصوصا نوجوان تبدیلی والوں کا اصل چہرہ پہچان چکے ہیں اسی وجہ سے لوگ دھڑا دھڑ اے این پی کے جھنڈے تلے جمع ہو رہے ہیں کیونکہ اے این پی پختون قوم کی ترجمان پارٹی ہے جنہوں نے امن کے نام پر ووٹ لینے کے بعد عظیم قربانیوں کے بدولت نہ صرف پائیدار امن قائم کیا بلکہ ریکارڈ ترقیاتی منصوبے مکمل کرکے پختون قوم کو ترقی کے راہ پر گامزن کیا لیکن گذشتہ الیکشن میں عوام کو دھوکہ دے کر ترقی کا راستہ روک دیا گیا جوکہ پختون قوم کے خلاف ایک منظم سازش تھی انہوں نے یقین دلایا کہ 2018نوجوانوں کا سال ہے جن کے ووٹ کی طاقت سے نام نہاد سیاستدانوں کو شکست دیگر ترقی کے شروع کردہ سفر کا دوبارہ آغاز کرکے جملہ عوامی مسائل کا خاتمہ کرینگے جس کے لئے اتفاق و اتحاد وقت کی اہم ضرورت ہے انہوں نے باچا خان کے برسی میں عوام کو بھر پور شرکت کی بھی اپیل کی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں