847

مینگورہ ، 13رکشہ ڈرائیوروں کو پولیس نے عدالت میں پیش کرکے ڈگر جیل بھیج دیا

مینگورہ شہر میں احتجاج کرنے کی مقدمے میں گرفتار13 رکشہ ڈرائیوروں کو پولیس نے عدالت میں پیش کرکے ڈگر جیل بھیج دیا۔ جبکہ رکشہ یونین کے صدر محمد ابراہیم خانخیل ڈیرہ اسماعیل خان جیل منتقل کردیا گیا۔ جبکہ 67رکشہ ڈرائیوروں کی گرفتاری کے لئے جگہ جگہ پر چھاپیپولیس کی جانب سے لگائی جارہی ہے۔ مینگورہ شہر میں رکشہ ڈرائیوروں کا پر امن احتجاج کا سلسلہ جاری ہے۔احتجاج ناکام بنانے کے لئے مینگورہ شہر بازار چلنے والے رکشے سادہ کپڑوں میں ملبوس پولیس اہلکار بھی چلا رہے ہیں۔ ڈرائیوروں کا پولیس پر الزم، پولیس نے گزشتہ روز ہمارے رکشوں کی شیشے توڑ دی ہے اور ہمارے ڈرائیوروں پر تشدد کیا۔جس میں متعدد زخمی ہوئے۔ جبکہ دوسری جانب پولیس کے جانب سے رکشہ ڈرائیوروں کی گرفتار ی کا سلسلہ جاری ہے۔پولیس نے رکشہ ڈرائیوروں کی گھروں پر چھاپے مار کر غریب عزت دار گھروں کی تقدس کو پامال کیا ہے۔رکشہ ڈرائیوروں نے میڈیا کو بتایا کہ مینگورہ شہر میں مختلف چوکوں میں پولیس اور انتظامیہ کے خلاف رکشہ ڈرائیوروں نے شدید نعرہ بازی کی ہے۔ ڈرائیووروں نے بتایا کہ آل سوات رکشہ یونین کے صدر محمد ابراہیم خانخیل سمیت دیگر غریب رکشہ ڈرائیوروں کی رہائی اور درجنوں غریب رکشہ ڈرائیوروں کے خلاف جعلی ایف آئی آر واپس لینے کا مطالبہ کیا۔ جبکہ صوبائی اور مرکزی حکومت سے غریب رکشہ ڈرائیوروں پر ظالمانہ تشدد اور جعلی ایف آئی آر میں تحقیقات کا مطالبہ بھی کیا۔ مظاہرین نے کہا کہ مینگورہ شہر میں پولیس نے پر امن احتجاج کرنے والوں کو گرفتار کیاہے۔یہ وہ گرفتار رکشہ ڈرائیورز ہے کہ جن کی گھر وں میں ایک وقت کی روٹی نہیں ہوتی ۔یہ وہ گرفتار رکشہ ڈرائیور ز ہے کہ جب رکشہ چلائینگے ۔تو دو وقت کی روٹی بمشکل پیدا کرینگے۔ڈرائیوروں کہا کہ پی ٹی آئی حکومت میں غریب رکشہ ڈرائیوروں پر ظلم شروع ہو اہے۔پولیس میں تبدیلی آتے ہی غریب عوام پر ظلم شروع کردیا ہے۔رکشہ ڈرائیوروں نے کہا ہے کہ جب تک ہمارے صدر محمد ابراہیم خانخیل کو ڈیرہ اسماعیل خان جیل سے رہا نہیں ہوتے ۔درجنوں گرفتار رکشہ ڈرائیوروں کو رہا نہیں کرتے۔ تو اس وقت تک ہم چھین سے نہیں بیٹھے گے۔اور ہمارا پر امن احتجاج جاری رہیگا۔انہوں نے کہا کہ اب بھی بے گناہ ڈرائیور پولیس کی زیر حراست ہے۔ا س حوالے سے ڈی پی او سوات عباس مجید مروت نے کہا کہ رکشہ ڈرائیورز کے جانب سے جو الزامات ہے اس میں حقیقت نہیں مجھے کچھ معلومات نہیں ہے۔یہ سب کچھ جھوٹ پر مبنی ہے۔ڈی ایس پی کو سٹی کو معلومات ہونگے ۔سوات میں سیاسی ،سماجی ،تاجر برادری نے بھی مطالبہ کیا ہے۔کہ جلد از جلد محمد ابراہیم خانخیل سمیت غریب رکشہ ڈرائیوروں کو رہا کیا جائے۔ورنہ ہم احتجاج کرنے پر مجبور نہ کریں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں