933

پختون دھرتی کومزید میدان جنگ نہیں‌بنانے دینگے.عوامی نےشنل پارٹی کے مرکزی جنرل سیکرٹری میاں افتخارحسین

عوامی نےشنل پارٹی کے مرکزی جنرل سےکرٹری میاں افتخار حسےن نے کہا ہے کہ پختون دھرتی کو مزےد مےدان جنگ بنانے کی اجازت نہےں دیں گے ، پاکستان میں ہمےشہ بڑی عالمی قوتوں کے مفاد میں پالےسیاں بنائی گئیں، عالمی قوتوں کے آپس کے جنگ میں پختونوں کو قربانی کابکرا بناےاگےا ،روس اور امرےکہ کی لڑائی کوجہاد کا نام دےاگےا جس میں لاکھوں پختونوں کو شہےد کےاگےا ہم نے پےنتےس سال قبل اس کوجہاد نہےں فساد کہا تھا، جو آج سچ ثابت ہوگےا ہے ، پنجاب میں ستر دہشتگرد تنظےمیں موجود ہےں ، پہلے ان کے خلاف آپرےشن کی جائے ، ان خےالات کااظہار انہوں نے ودودےہ ہال سےدوشرےف میں خدائی خدمتگار تحرےک کے بانی خان عبدالغفار خان اور رہبر تحرےک اے اےن پی خان عبدالولی خان کی برسی کے حوالے سے منعقدہ اےک بڑے تقرےب سے خطاب کرتے ہوئے کےا اس موقع پر اے اےن پی سوات کے صدر شےر شاہ خان ،جنرل سےکرٹری رحمت علی خان ، سابق صوبائی وزراءاےوب خان ، واجد علی خان ، سابق ممبر صوبائی اسمبلی وقار خان ، نائب ضلع ناظم عبدالجبار خان ، تحصےل ناظم بابوزئی اکرام خان ، ابراہیم دےولئی ، خواجہ محمدخان اور دےگر نے خطاب کےا ، اور باچاخان ولی خان کو شاندار الفاظ میں خراج عقےدت پےش کےا ، میاں افتخار حسےن نے کہاکہ باچا خان پختونوں کے محسن تھے جنہوں نے جنگ آزادی میں اےک کلےدی کردار ادا کےا ہے ، باچا خآن نے پختونوں کو عدم تشدد کا فلسفہ دےا ، آج ان کی جدوجہد کی وجہ سے پختونوں میں صبر وتحمل پاےاجاتا ہے ، باچا خان کی پوری زندگی ہمارے لئے مشعل راہ ہے ، انہوں نے کہاکہ رہبر تحرےک عبدالولی خان غےر ت مند پختون لےڈر تھے ، جنہوں نے ملک میں جمہورےت کے لئے جدوجہد کی ان کی زندگی ہمارے لئے اےک کھلی کتاب کی مانند ہے ، انہوں نے کہاکہ آج سے پےنتےس سال قبل افغانستان کی سرزمین کو دوبڑی قوتوں نے مےدان جنگ بنادےا اور اس جنگ میں پاکستان کو اس کو جہاد کانام دےاگےا ، اس وقت بھی ہمارے بزرگوں نے اس جنگ کو فساد کہا تھا، جس کی وجہ سے ہمارے بزرگوں پر کفر کے تفوے لگائے گئے لےکن پےنتےس سال بعد وہ سچ ثابت ہوگےا جوہمارے بزرگوں نے کہا تھا، آج ہر کوئی اس کو فساد کہتے ہےں ، انہوں نے کہاکہ بدقسمتی سے پاکستان میں دھرتی کے مفاد کے بجائے بڑی قوتوں کی مفاد میں پالےسےاں بنائی جاتی ہین ، جس کا خمےازہ پاکستانیوں کو بھگتنا پڑتا ہے ، انہوں نے کہاکہ جب تک افغانستان اور پاکستان میں اعتماد کا فضاءقائم نہےں ہوتا خطے میں امن کا قےام ممکن نہےں ، انہوں نے کہاکہ ےہ بات خوش آئند ہے کہ وہ پاکستان افغان تعلقات کو بہتر بنانے کے لئے حکومت نے پختون مشران کی سربراہی میں اےک جرگہ افغانستان بھےجنے کا فےصلہ کےا ہے ، جس سے امےد پےدا ہوسکتی ہے کہ دونوں ملکوں میں اعتماد کا فضاءبحال ہوجائے گا ، انہوں نے کہاکہ امرےکہ افغانستان میں پاکستان کی مدد سے اپنا اڈہ قائم کرنے میں کامےاب ہوچکا ہے ، اور اب چےن گوادر آکر گرم پانی ک رسائی حاصل کرلی ہے اگر اس طرح بڑی قوتوں کے مفاد میں پالےسےاں بنائی گئےں تو آئندہ بھی ہم نقصان اٹھائےں گے ، انہوں نے خبردار کےا کہ ہم پختونوں کو مزےد قربانی کا بکرا اور پختون دھرتی کو مزےد مےدان جنگ بنانے کی اجازت ہرگز نہےں دیں گے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں